معظم المحبة

BY: MAHAM NOOR DARABU, M.B.B.S., BATCH XX
PHOTO CREDITS: YOUNIS BAZAI, M.B.B.S., BATCH XX 

ریزہ ریزہ ہو گیا میری  حسرتوں کا محل،

اب ہوتا نہیں وہ جو ہوتا تھا پہلے پہل۔

اوجھل ہوۓ ہو جو تم نظروں سے میری،

آنکھیں رہتیں ہیں نم سی یاد میں تیری۔

وہ وعدے، وہ قسمیں جو کھائیں تھیں ہم نے ساتھ،

الوداع کر کے چل پڑے تم، بھلا کر ہر بات۔

کیا کریں سمجھتا بھی تو نہیں دلِ نادان،

پہلی محبت بھلانا ہوتا نہیں آساں۔

جہاں دیکھتا ہوں نظر آتا ہے تیرا چہرا،

درد اُٹھتا ہے دل میں، ہوتا ہے زخم گہرہ۔

لت جو لگی تھی عشق کے مزے کی،

کیا ہی پتا تھا درد کی محفل سجے گی۔

جو تیرے حُسن کے نشے میں توڑا سب سے واسطہ،

دنیا تو بھلائ ہی، چھوڑا خدا کا بھی راستہ۔

ہوتی بڑی ہی خودغرض ہے یہ عجوبہِ محبت،

لیتی ہے سب کچھ، دیتی نہیں کچھ محبت۔

پایا تو میں نے کچھ نہ، چِھن گیا مگر میرا سب کچھ،

در پہ تیرے کھڑا ہوں، خدا تو ہی اب کر کچھ۔

سجدے میں آج گرا ہوں بڑی ہی مدّتوں کے بعد،

تیرے حوالے خود کو کر کے ہوا ہوں آزاد۔

بس اک دفع دکھا دے مجھے مدینا اور کعبہ،

اللہ بس تو ہی ہے معظم المحبة۔

 

 

About the author: Ever since I’ve come to med school, the only As I’ve seen are in the attendance register. 
Maham blogs at MahamNoorBlog.WordPress.com

Golden Beach Gawadar

 

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s